گائیڈ بک

اٹھارواں ﺷﯿﺦ طﻮﺳﯽ اﻧﭩﺮﻧﯿﺸﻨﻞ رﯾﺴﺮچ ﻓﯿﺴﭩﯿﻮل

 

ﻋﻨﻮان: معاصر دﻧﯿا اور اﺳﻼم

(رہبر معظم کے یورپ اور شمالی امریکا کے جوانوں کے نام پیام کی روشنی میں)

   

اور

مقابلہ آثار و کتب

     

 

ﺳﺎل ١٩۹۳ ﮐﮯ شائع شدہ آﺛﺎر   

۱  تالیف شدہ کتابیں، ﺗﺮﺟمہ شدہ ﮐﺘﺎﺑﯿﮟ، ﺗﺼﺤﯿﺢ و ﺗﺤﻘﯿﻖ ﺷﺪه ﮐﺘﺎﺑﯿﮟ،تقریرات و شروحات 

۲ پوسٹ گریجویشن اور ایم فل کے وہ رﺳﺎﻟﮯ جن کا دفاع۱۳۹۳ میں ہوا ہو

۳ ﻣﻄﺒﻮﻋہ یا مختلف کانفرنسوں اور ﻓﯿﺴﭩﯿﻮلز میں پیش کیے جانے والے مقالات

 

 

اٹھارﻮاں ﺷﯿﺦ طﻮﺳﯽ اﻧﭩﺮﻧﯿﺸﻨﻞ رﯾﺴﺮچ ﻓﯿﺴﭩﯿﻮل برائے ﻣﻘﺎﻟہ ﻧﻮﯾﺴﯽ

اٹھارﻮیں ﺷﯿﺦ طﻮﺳﯽ اﻧﭩﺮﻧﯿﺸﻨﻞ رﯾﺴﺮچ ﻓﯿﺴﭩﯿﻮل برائے ﻣﻘﺎﻟہ ﻧﻮﯾﺴﯽ میں جامعۃ المصطفیٰ(ص) العالمیہ کے اساتذہ، محققین اور فضلا کے علمی مقالات، ایران اور ایران سے باہر حوزات علمیہ کے اساتذہ اور دانشور محققین اور اسی طرح جامعات کے اساتذہ و محققین کے علمی مقالات جمع کرانے کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے۔


 

ﻋﻨﻮان: معاصر دﻧﯿا اور اﺳﻼم

(رہبر معظم کے یورپ اور شمالی امریکا کے جوانوں کے نام پیام کی روشنی میں)

متعلقہ و جزئی عناوین:

الف) ادیان میں مکالمہ

1.      مکالمہ ادیان کی تاریخ اور پس منظر؛

2.      مکالمہ ادیان کی ضرورت اور اس کے اثرات؛

3.      مکالمہ اور ارتباطات کے لیے اسلام میں گنجائش؛

4.      اسلام میں مکالمہ کے مبانی اور اصول؛

5.      دعوت اسلام میں مکالمہ کے اسلوب؛

6.      پیغمبر اکرمﷺ کے خطوط

ب) اسلام اور پیغمبرﷺ کے حقیقی چہرے کی ترسیم

1.      عصر حاضر اور اسلام اور حیات پیغمبر اکرمﷺ کے ساتھ بلا واسطہ آشنائی کی ضرورت؛

2.      پیغمبر اکرمﷺ کی شخصیت اور اس کے مختلف پہلو؛

3.      مغربی میڈیا میں اسلام اور پیغمبر اکرمﷺ کی پیش کی جانے والی تصویر؛

4.      پیغمبر اکرمﷺ کی شخصیت پر مغربی یلغار کے اسباب؛

5.      اسلام ناب محمدی کے عناصر؛

6.      عصر حاضر میں حقیقی اسلام پیش کرنے کے اسلوب؛

7.      عصر حاضر میں حقیقی اسلام کی شناخت میں موانع؛

8.      اسلامی معنویت اور عصر حاضر؛

9.      تمدن ساز اسلامی اقدار اور عصر حاضر کی بہرہ مندی؛

10.  عصر حاضر کے لیے اسلام کی انسانی اور اخلاقی تعلیمات۔

ج) نوجوان، اسلام اور عصر حاضر

1.      نوجوان، اسلام اور مغرب کی نظر میں؛

2.      نوجوانوں کے ساتھ باہمی رابطہ اور گفتگو کے اسلوب؛

3.      نوجوان اور بشریت کا مستقبل؛

4.      نوجوان، اسلام کی عالمی گفتگو کے اصل مخاطب؛

5.      نوجوان، حقیقت جوئی اور سوال کرنے کا جذبہ؛

6.      نوجوان اور استکبار کے کردار سے اشنائی؛

7.      اسلام سے بلا واسطہ آگاہی اور مغربی ذرائع ابلاغ سے چھٹکارے میں جوانوں کی اجتماعی ذمہ داری؛

8.      مغربی نوجوانوں کے لیے قرآن اور اسلامی فکر سے آشنائی کے طریقے؛

9.      مغربی نوجوانوں کی اسلام، قرآن اور پیغمبرﷺ سے آشنائی کا جائزہ (فیلڈ اسٹڈی)؛

10.  اسلام کے مقابل مغربی نوجوانوں کے احساسات کے برانگیختہ کرنے میں استکبار کی حکمت عملد؛

11.  مغرب میں عوام کے ضمیر بیدار کرنے میں نوجوانوں کی ذمہ داریاں؛

12.  نوجوان اور مغربی سوسائٹی کی موجودہ رونما ہونے والے حوادث اور تبدیلیوں سے لاتعلقی کے اسباب اور ان کی شناخت؛

13.  نوجوان اور مغرب میں سیاست کی صداقت سے جدائی کے لیے ضروری آشنائی۔

د) عصر حاضر اور اسلام فوبیا

1.      اسلام کی غلط منظر کشی کرنے میں استکبار اور مغربی سیاستدانوں کے منافع؛

2.      مغربی میڈیا اور اسلام فوبیا؛

3.      اسلام فوبیا میں منحرف سلسلوں کا کردار؛

4.      مغربی دنیا میں اسلام فوبیا کے تاریخ؛

5.      اسلام فوبیا میں استکبار کے ہتھکنڈے؛

6.      اسلام سے نفرت اور خوف پھیلانے میں شدت کے عوامل و اسباب؛

7.      اسلام فوبیا کے مقابلہ میں مسلمانوں کی ذمہ داریاں؛

8.      اسلام فوبیا کے پیچھے استکبار کے اہداف کو افشا کرنے میں نوجوانوں کی ذمہ داریاں.

 

مقالہ نویسی کے اصول:

1.      مقالہ میں جدت ہونی چاہئے؛

2.      تحقیق کے اہداف اور سابقہ کی پڑتال ہونی چاہئے؛

3.      مقالی نویس موضوع پر متمرکز رہے؛

4.      مقالہ نویس معتبر منابع سے استفادہ کرے؛

5.      مقالہ کا خلاصہ جامع ہونا چاہئے؛

6.      فوٹ نوٹ صفحہ کے آخر میں ہونے چاہئیں؛

7.      مقالہ نویس اپنا تجزیہ اور استدلال پیش کرے؛

8.      منقول آرا مآخذ کے مطابق ہونی چاہئیں؛

9.      مقالہ نویس مورد نظر مسئلہ سے مربوط مسائل کے تجزیہ کرے؛

10.  مقالہ رواں، سلیس اور قواعد انشا کے مطابق ہونا چاہئے؛

11.  مقالہ کا عنوان فیسٹیول کے مجوزہ اصلی موضوع کے ساتھ متناسب ہونا چاہئے؛

12.  کلیدی الفاظ مقالہ کے مطابق اور خلاصہ کے بعد ذکر ہونے چاہئیں؛

13.  مقدمہ، مقالہ کے متن سے پہلے اور کلیدی الفاظ کے بعد آنا چاہئے، مقدمہ زیادہ سے زیادہ ۲ صفحات پر مشتمل ہو؛

14.  پہلے صفحہ پر مقالہ کا عنوان، مقالہ نویس کا نام، ملک کا نام، تعلیمی سطح اور مربوطہ تعلیمی مرکز کا نام ذکر ہوگا۔

 

مقابہ مقالہ نویسی میں شرکت کی شرائط:

1.      مقابلہ مقالہ نویسی میں بھیجے جانے والے مقالات کے لیے ضروری ہے وہ مقابلہ کے کلی موضوع  (معاصر دﻧﯿا اورمکالمہ اﺳﻼم) یا مذکورہ بالا جزئی موضوعات سے ہٹ کر نہ ہوں؛

2.      جامعۃ المصطفیٰ(ص) العالمیہ کے محققین، ایرانی و غیر ایرانی فضلا، ایران اور ایران سے باہر موجود حوزات علمیہ کے محققین اور دانشور حضرات اور اس کے علاوہ جامعات سے تعلق رکھنے والے اساتذہ اور محققین سبھی اس مقابلہ میں شرکت کرنے کے مجاز ہیں؛

3.      مقابلہ میں شرکت کرنے والوں کے لیے ضروری ہے کہ وہ مقالہ یا کتاب کا رجسٹریشن فارم پر کرنے کا ساتھ ساتھ اپنی تصویر، مقالے کی سافٹ کاپی کے ساتھ اٹیچ کرکے ارسال کریں؛

4.      مقالہ کا حجم کم سے کم ۱۵ اور زیادہ سے زیادہ ۳۰، A4 صفحات پر مشتمل ہونا چاہئے۔ مقالہ ٹائپ شدہ اور BLOTUS ۱۴ فونٹ کا ہونا چاہئے؛

5.      مقالہ کی سافٹ کاپی کے ساتھ ساتھ اصل مقالہ بھی ارسال کرنا ہوگا۔

 

ارسال کی آخری تاریخ

                           30/8/1394

 

اٹھارﻮاں ﺷﯿﺦ طﻮﺳﯽ اﻧﭩﺮﻧﯿﺸﻨﻞ رﯾﺴﺮچ ﻓﯿﺴﭩﯿﻮل برائے ﻣﻘﺎﻟہ ﻧﻮﯾﺴﯽ

 

صرف ﺳﺎل ١٩۹۳ ﮐﮯ شائع شدہ آﺛﺎرکے لیے   

۱  تالیف شدہ کتابیں، ﺗﺮﺟمہ شدہ ﮐﺘﺎﺑﯿﮟ، ﺗﺼﺤﯿﺢ و ﺗﺤﻘﯿﻖ ﺷﺪه ﮐﺘﺎﺑﯿﮟ،تقریرات و شروحات 

۲ پوسٹ گریجویشن اور ایم فل کے وہ رﺳﺎﻟﮯ جن کا دفاع۱۳۹۳ میں ہوا ہو

۳ ﻣﻄﺒﻮﻋہ یا مختلف کانفرنسوں اور ﻓﯿﺴﭩﯿﻮلز میں پیش کیے جانے والے مقالات

 

مقابلہ علمی آثار میں شرکت کی شرائط

1.      اس حصہ میں شائع شدہ کتب، ترجمے، تصحیح و تحقیق، تقریر و شرح، انسائیکلوپیڈیا، شائع شدہ مقالات، مختلف علمی کانفرنسز اور فیسٹیولز میں پیش کیے جانے والے مقالات، ۱۳۹۳ میں دفاع ہونے والے اسلامی اور انسانی علوم پر مقالات اور تھیسز قبول کیے جائیں گے؛

2.      یہ مقابلہ جامعۃ المصطفیٰ(ص) کے محققین، فیکلٹی ممبران اور جامعۃ المصطفیٰ(ص) کے معاون اساتذہ، جامعۃ المصطفیٰ(ص) کے ایرانی اور غیر ایرانی طلاب، جامعۃ المصطفیٰ(ص) کے شارٹ کورسز انسٹی ٹیوٹ میں شرکت کرنے والے غیر ایرانی محققین اور ایران میں مقیم جامعۃ المصطفیٰ(ص) کے غیر ایرانی طلاب کی فیمیلیز کے ساتھ مخصوص ہے؛

3.      فقط ۱۳۹۳ ھ۔ش، ۱۴۳۵ ھ۔ق یا ۲۰۱۴ ء میں شائع ہونے والے آثار کو قبول کیا جائے گا؛

4.      وہ تحقیقی رسالے اور تھیسزجن کا دفاع جامعۃ المصطفیٰ(ص) سے وابستہ مدارس اور (اندرون و بیرون ملک)اس کے شعبہ جات میں ہوا ہو، انہیں فیسٹیول سیکریٹیریٹ کے تحقیقی و تعلیمی شعبوں کے ساتھ ہماہنگی سے ارسا ل کیا جا ئے اور ایسے آثار کو دستی طور پر قبول نہیں کیا جا ئے گا، (البتہ وہ علمی رسالے اور تھیسز جن کا دفاع جامعۃ المصطفیٰ(ص) العالمیہ کے علاوہ کسی دوسرے تعلیمی ادارے میں ہوا ہو، ان کو دستی طور پر قبول کیا جائے گا؛

5.       ترجمہ کی صورت میں اصل متن کو بھی ضمیمہ کیا جاۓ؛

6.      گروہی صورت میں تیار ہونے والے اثر کو جمع کراتے وقت فیسٹیول سیکریٹیریٹ کو مطلع کرنا لازمی ہے؛

7.      فیسٹیول نے بر تر گروہی آثار کے لئے فقط ایک انعام ہی رکھا ہے؛

توجہ: تھیسز کے علاوہ ارسال شدہ آثار کو کسی صورت واپس نہیں کیا جائیگا۔

 

آثار بھیجنے یا جمع کرانے کی آخری تاریخ:31/5/1391؛

 

توجہ: رجسٹریشن فارم تک دسترسی نہ ہونے کی صورت میں محقق مندرجہ ذیل موارد کو مقالہ کی ابتدا میں ذکر کرے اور اس کی فائل کو ای میل کے ذریعے ارسال کرے۔

نام، خاندانی نام، ملک کا نام، تاریخ پیدائش، والد کا نام، کمپیوٹر کوڈ، اسٹیٹس (طالب علم، استاد، فیکلٹی، ملازم، محقق اور اسٹوڈنٹ)، جامعۃ المصطفیٰ(ص) سے وابستہ ہے یا کسی اور ادارے سے، مکمل پتہ، موبائل نمبر، ای میل، بینک اکائونٹ نمبر (صادرات بینک کا ہو تو بہتر ہے)

 

فیسٹیول سیکریٹیریٹ کا پتہ:

قم۔بلوارامین،سہ راہ سالاریہ،مجتمع امین،بلوک۳،دوسری منزل، کمرہ نمبر ۲۳۰، دبیر خانہ جشنوارہ بین المللی پژوہشی شیخ طوسیؒ .

فون:۲۱۳۳۳۸۲-۲۵۱-۰۰۹۸                                ٹیلی فیکس:۲۱۳۳۳۷۵-0251

فیسٹیول منتظم: ۰۹۱۹۲۸۱۷۰۰۲                   ای میل:tousi@miu.ac.ir   

 

        ویب سایٹ:http://tousi.miu.ac.ir

کليه حقوق اين وب سايت متعلق به جشنواره بين المللي-پژوهشي شيخ طوسي (ره) مي‌باشد.
Copyright © 2009-2013 - All rights reserved